1,247

راولاکوٹ پولیس ڈاکو بن گئی ،پردہ فاش کرنے پر شہری کو پولیس مقابلے میں مارنے کی دھمکیاں

راولاکوٹ (بیورو رپورٹ ) عوام کے محافظ ہی لٹیرے بن گئے بے گنا ہ شہریوں کو ہراساں کر کے رقم بٹورنا اور لو ٹ ما ر کرنا چند پولیس اہلکاران نے وطیرہ بنا لیا جرائم پیشہ افراد کی سر پرستی کرنے لگے پولیس اہلکاران زاہد نذیر اور شعیب طارق کا ستایا سنگولہ کا رہائشی محمد شبیر خان اپنی فریا د لے کر اخبا ر کے دفتر پہنچ گیا

محمد شبیر خان نے بتا یا کہ وہ ایک شریف شہری ہے اور سنگولہ ہاڑولی کے مقام پر دکا ن چلاتا ہے اور محنت مزدوری کر کہ اپنے اہل خانہ کا پیٹ پالتا ہے مگر چند پولیس اہلکاران ذاتی عناد کے باعث میری جا ن کے دشمن بن چکے ہیں آئے روز مجھے ہراساں کرکہ رقم بٹورتے ہیں اور مجھے جھوٹے مقدما ت میں اُلجھا کر ذہنی طور پر ٹارچر کر تے ہیں اور تھانے لے جا کر تشدد کرتے ہیں مجھے پولیس مقابلے میں مار دینے کی دھمکیاں دیتے ہیں

گزشتہ روز میں قریبی ہوٹل پر چائے پینے گیا تھا کہ اسی اثنا ء میں پولیس کی ایک گاڑی میرے دکان کے سامنے رکی جس سے پولیس اہلکاران زاہد نذیر ،شعیب طارق اور دیگر اہلکاران اُترے جن کے مجھے نا م معلو م نہیں میری دکان میں داخل ہوئے اور دکان کی تلاشی لی جہاں سے کیش مبلغ 93 ہزار روپے نکال کر لے گئے میرے اور دیگر تاجران کے اصرار کرنے پر مجھے زبر دستی پولیس کی گاڑی میں ڈال کر تھانے لے گئے

جہاں دو دن تک مجھ پر بے جا تشدد کرتے رہے اور جھوٹا مقدمہ درج کر دیا ۔میں نے اپنی رقم طلب کی اور منت سماجت کرتا رہا مگر انہوں نے میری ایک نہ سنی اور دھمکی دی کہ اگر کسی سے ذکر کیا تو تم پر مقدمات بنا کر تمہارا حشر نشر کریں گے محمد شبیر خان نے بتایا کہ ان اہلکاران کی زیادتیوں کیخلاف میں نے ڈی آئی جی پونچھ کو درخواست بھی دے دی ہے اور اعلی احکام سے اپیل ہے کہ نوٹس لے کر مجھے انصاف دلائیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں